Published From Aurangabad & Buldhana

جراثیم کے حملہ سے مہاراشٹر کے 41لاکھ کسانوں کی ہوئی فصل خراب

اورنگ آباد:۔مہاراشٹر کے مراٹھواڑہ اور ودربھہ علاقہ میں 41لاکھ کسانوں کے لئے نئے سال کی شروعات انتہائی خراب اور نقصاندہ ثابت ہوئی ہے۔اس معاملہ میں خاص طور پر سب سے زیادہ نقصان کپاس کی فصل کو ہوا ہے۔ اس نقصان کی تفصیلات اورنگ آباد، امراوتی اور ناگپور کے ڈیویژنل کمشنر کے دفاتر سے ملی اعداد و شمار کی بنیاد پر سامنے آئی ہیں۔
’پنک بو ل وارم‘ نامی جراثیم کی وجہ سے کپاس کی فصل کو ہوئے نقصان کی تفصیلات میں تقریباً 32لاکھ ہیکٹر کی کھیتی تباہ ہوئی ہے جس میں 17.25لاکھ ہیکٹر کی فصل مراٹھواڑہ سے ہے اور 14.91لاکھ ہیکٹر فصل ودربھا سے ہے۔ جن 41لاکھ کسانوں کو نقصان پہنچا ہے ان میں سے 26.09لاکھ کسانوں کا تعلق مراٹھواڑہ سے ہے اور 14.16لاکھ کسانوں کا تعلق ودربھا سے ہے۔اب اس نقصان کی بھرپائی کے لئے ان کسانوں کے خاندان والوں کو اپنے بچوں کی تعلیم اور تقاریب کو چھوڑ کر اگلی فصل کی تیاری میں سن کچھ لگانا ہوگا۔ حکومت نے اس نقصان کے بدلہ ایک ہیکٹر پر 30,800روپئے دینے کا اعلان تو کیا ہے لیکن وہ ادا کب ہوگا پتا نہیں۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!