Published From Aurangabad & Buldhana

تین طلاق بل اور پرسنل لاء سے متعلق سازشوں کے خلاف

جالنہ میں خواتین احتجاج نئی تاریخ رقم کرے گا ، تیاریاں زوروں پر

جالنہ (محمد اظہر فاضل) جب سے مرکزمیں بی جے پی حکومت قائم ہوئی ہے اسی وقت سے ہندوستان میں شرعی احکام میں دخل اندازی میں بھی اضافہ ہوتا جارہا ہے ۔بی جے پی حکومت اپنی ناکامیوں کو چھپانے نیز اپنے نتخابی وعدوں کے پورا نہ کرنے پر جواب دہی سے بچنے اور فرقہ پرستوں کو اپنی جانب متوجہ کرنے کیلئے متواترشریعت اسلامیہ پر حملے کر رہی ہیں۔بی جے پی نے اپنی مہرہ خواتین کوتین طلاق کا مقدمہ دیکر سپریم کورٹ تک پہونچا یا ۔نتیجہ کے بعد انکا بی جے پی میں استقبال اور شمولیت کے رازوں سے اب پردہ اٹھنا شروع ہوگیا ہے ۔ مسلم خواتین کیلئے راحت اور ظلم سے نجات دلانے والا قانون بنانے والے قانون سا زمکمل طور پر کافر و مشرکین ہیں جنھیں خود انکے مذہب کا پورا علم نہیں ۔ دین اسلام کے منکروں کا بنایا ہوا خواتین بل اگر پاس ہو جاتا ہے تو مسلمان عورتوں کی حالت بہت خراب ہوسکتی ہے۔ اس قانون سے شوہر تین سال کیلئے جیل چلا جائے گا اورمسلمان عورت معلق ہو جائیں گی ۔نان نفقہ کا دور دور تک کوئی سامان نہ ہوگا اور کوئی پر سان حال نہ ہوگا ۔وہیں جیل سے واپسی کے بعد کونساشوہر اپنی بیوی کو رکھے گا ایسی کئی شقوں کی وجہ سے قانون بنانے والوں کی بھی اب نیندیں اڑ چکی ہیں ۔خواتین احتجاج منظم کرنے کیلئے آج اصلاح معاشرہ کمیٹی مسلم پرسنل لاء بورڈ کے کارکنوں نے شہر میں باغبان مسجد قدیم جالنہ میں صبح دس بجے انتظامی امور کو لیکر تبادلہ خیال کیا جس میں عید گاہ کی صاف صفائی ، جلو س کے درمیان پانی کی فراہمی ، اسٹیج ،سیکیوریٹی ، بینرس ، اور پوسٹر جیسے مسائل پر لائحہ عمل مرتب کیا گیا ۔ ڈاکٹر رفیق زکریا اردو اسکول میں خواتین بیداری کی نشست لی گئی جس میں چار تا پانچ سو خواتین نے شرکت کی ۔اسی طرح ہند نگر میں مفتی فہیم اور مفتی یوسف نے خواتین سے خطاب کیا ۔یہاں پر تین سو سے زائد خواتین نے شرکت کی ۔ ضلع خواتین کنوینر یاسمین باجی نے نوتن وساہت ، منٹھا چو پلی ، احمد کالونی ، گاندھی نگر، برہان نگر اور رحمن گنج میں اجتماعی اور انفرادی ملاقاتیں کی ۔جالنہ کے دینی مکاتب کی طالبات نے پورے شہر میں گشت کیا اوگھر گھر جا کر ر خواتین کو جلوس کے متعلق پاپمفلٹ تقسیم کئے ۔ آج اقصی فنکشن ہال قدیم جالنہ میں دکھی نگر ،یوسف کالونی ، ملت نگر ، نہدی کالونی ،شیر سوار نگر ، امان اللہ پارک ، جل محل ، محلوں پر مشتمل خواتین کا اجلاس بعد نماز ظہر منعقد کیا گیا ہے جس میں جالنہ کے علماء کرام و خواتین ذمہ داران اپنی مخاطبت کریں گے ۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!