Published From Aurangabad & Buldhana

تلنگانہ میں کانگریس کا اویسی سے اتحاد نہیں

انتخابات کے بعد وزیراعلیٰ کے نام پر فیصلہ

حیدرآباد: تلنگانہ میں وزیر اعلیٰ کے استعفیٰ دینے اور اسمبلی تحلیل ہونے کے بعد انتخابی سرگرمیاں تیز ہوگئی ہیں۔ وقت سے پہلے ہونے والے انتخابات کو دیکھتے ہوئے تمام پارٹیوں کے ساتھ کانگریس نے بھی تیاریاں شروع کردی ہیں۔ اور اسی کے پیش نظر کانگریس نے اسد الدین اویسی کی پارٹی آل انڈیا مجلس اتحاد المسلین سے اتحاد سے انکار کردیا ہے۔ساتھ ہی کانگریس اس انتخاب میں کسی کو بھی وزیر اعلیٰ کے چہرے کے طور پر پیش نہیں کرے گی۔ بلکہ اس کا فیصلہ انتخابات کے بعد ہوگا۔ کانگریس تلنگانہ کے رہنماء رام چندر کھوٹیہ نے دعویٰ کیا کہ ٹی آر ایس لیڈر اور سابق وزیر اعلیٰ چندرشیکھر راؤ نے وقت سے پہلے اسمبلی اس لئے تحلیل کی تاکہ اس وقت اقلیتوں کے ووٹ لے سکیں اور پھر لوک سبھا انتخابات میں نریندر مودی کے ساتھ چلے جائیں۔

رام چندر نے کہا کہ تلنگانہ میں انتخاب لڑنے اور جیتنے کے لئے کانگریس تیار ہے۔ ساتھ انہوں نے کے سی آر پر ریاست سے کیے گئے اپنے وعدوں کو پورا نہ کرنے کا الزام لگایا ہے۔انہوں نے کہا کہ وعدہ کے خلاف تلنگانہ میں اقلیتوں کو ریزرویشن نہیں دیا گیااور غریبوں کو مکان نہیں دیے گئے ۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!