Published From Aurangabad & Buldhana

بی سی سی آئی نے ہندوستانی بلے باز پرتھوی شاہ پر لگائی آٹھ مہینے کی پابندی

انڈیا کے نوجوان اوپنر پرتھوی شا کو ڈوپنگ کے ایک معاملے میں آٹھ مہینوں کے لیے معطل کر دیا گیا ہے۔ پرتھوی شا سچن تندولکر کے بعد سب سے کم عمر میں سنچری بنانے والے انڈین کھلاڑی ہیں جبکہ انڈیا کی جانب سے وہ اپنے پہلے ہی ٹیسٹ میں سب سے کم عمری میں سنچری بنانے کے ریکارڈ کے حامل ہیں۔

انڈین کرکٹ بورڈ بی سی سی آئی نے کہا ہے کہ ان کے ساتھ دو دیگر کھلاڑیوں کو بھی معطل کیا گیا ہے۔ بی سی سی آئی نے ایک بیان جاری کیا ہے اور اس میں یہ کہا گیا ہے کہ پرتھوی شا نے انجانے میں ممنوعہ شے لی تھی جو عام طور پر کھانسی کی دواؤں میں پائی جاتی ہے۔

بی سی سی آئی نے بیان میں کہا: ‘پرتھوی شا نے 22 فروری سنہ 2019 کو اندور میں منعقدہ سید مشتاق علی ٹرافی کے ایک میچ کے دوران ڈوپنگ کی جانچ کے تحت اپنے پیشاب کا نمونہ دیا تھا۔ ’ان کے پیشاب کے نمونے میں ٹربوٹالائن مادہ پایا گیا جو کہ انسداد ڈوپنگ کی عالمی تنظیم واڈا کی ممنوعہ ادویات کی فہرست میں شامل ہے۔

بی سی سی آئی نے بتایا کہ پرتھوی شا نے اس کا اعتراف کیا ہے تاہم کہا ہے کہ انھوں نے دانستہ طور پر اس کا استعمال نہیں کیا بلکہ کھانسی کے علاج کے لیے کف سیرپ کے طور پر لیا تھا۔

پرتھوی شا نے اپنے ایک ٹویٹ میں لکھا کہ انھیں اس بات کا علم ہوا ہے کہ وہ نومبر تک کرکٹ نہیں کھیل سکیں گے۔

پرتھوی شا پر یہ پابندی 16 مارچ سے ہی عائد کر دی گئی ہے جو 15 نومبر 2019 کو پوری ہوگی۔

پرتھوی شا نے لکھا: ‘میں اسے سنجیدگی سے قبول کرتا ہوں۔ ابھی میں گذشتہ ٹورنامنٹ میں آنے والی چوٹ سے نکلنے کی کوشش کر رہا ہوں۔ لیکن اس خبر نے مجھے جھنجھوڑ کر رکھ دیا ہے۔’

انھوں نے مزید کہا: ‘مجھے اسے سبق کے طور پر لینا ہوگا اور امید کہ ہماری کھیل برادری میں یہ واقعہ دوسروں کے لیے بھی سبق ثابت ہو۔’

بورڈ نے کہا وہ شا کے جواب سے مطمئن ہیں کہ انھوں نے یہ دوا کھانسی کے لیے لی تھی نہ کہ اپنی کارکردگی بہتر کرنے کے لیے۔ پرتھوی شا کے ساتھ ڈومیسٹک کرکٹ میں ودربھ کے لیے کھیلنے والے اکشے دلاور اور راجستھان کے لیے کھیلنے والے دویہ راج پر بھی آٹھ مہینوں کی پابندی لگائی گئی ہے۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!