Published From Aurangabad & Buldhana

این ڈی اے سے الگ ہوگی ٹی ڈی پی ، کل استعفی دیں گے مودی کابینہ کے دو وزرا

حیدر آباد : آندھراد پردیش کو خصوصی ریاست کا درجہ دینے کے مطالبہ پر بضد چندرا بابو نائیڈو کی تیلگو دیشم پارٹی ( ٹی ڈی پی ) نے بی جے پی کے زیر قیادت این ڈی اے سے اتحاد توڑنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ اطلاعات کے مطابق جمعرات کو مودی حکومت میں ٹی ڈی پی کے کابینی وزیر اشوک گجپتی راجو اور وائی ایس چودھری اپنا استعفی دیدیں گے ۔ خیال رہے کہ اس سے پہلے مرکزی وزیر ارون جیٹلی نے آندھرا پردیش کو خصوصی ریاست کا درجہ دینے سے انکار کردیا تھا ۔ جیٹلی نے کہا تھا کہ آندھرا پردیش کو صرف خصوصی پیکج دیا جائے گا۔
آندھرا پردیش کے وزیر اعلی اور تیلگو دیشم پارٹی کے سربراہ چندرا بابو نائیڈو نے بجٹ میں ریاست کی اندیکھی کو لے کر این ڈی اے حکومت کے تئیں ناراضگی ظاہر کی تھی ۔ نائیڈو نے کہا تھا کہ حکومت نے پانچ سال پہلے آندھرا پردیش کی تقسیم کے وقت بجٹ میں کئی وعدے کئے تھے ، لیکن ایک بھی وعدہ پورا نہیں کیا ۔ اب موصولہ اطلاعات کے مطابق ٹی ڈی پی جمعرات کو این ڈی اے سے الگ ہونے کا باضابطہ اعلان کرے گی۔

نائیڈو نے کہا : ہم اقتدار کے بھوکے نہیں
این ڈی اے سے الگ ہونے کے فیصلہ پر آندھرا پردیش کے وزیر اعلی چندرا بابو نائیڈو نے کہا کہ مودی حکومت نے آندھرا پردیش کو خصوصی ریاست کا درجہ دینے اور اسپیشل پیکج دینے کا وعدہ کیا تھا ، لیکن وعدہ نہیں نبھایا ہے ، اسلئے یہ طے کیا گیا ہے کہ ٹی ڈی پی این ڈی اے سے الگ ہوگی ۔ ہماری پارٹی کے دو وزرا کل استعفی دیدیں گے۔
چندر بابو نائیڈو نے کہا کہ ہم نے اس سلسلہ میں سبھی لوگوں سے تبادلہ خیال کیا ہے ۔ ہم اقتدار کے بھوکے نہیں ہیں ، میں نے پارٹی کے فیصلہ کے بارے میں بی جے پی ہائی کمان کو بتانے کی بھی کوشش کی ، لیکن میرا ان سے رابطہ نہیں ہوسکا۔
کیا ہے پورا معاملہ ؟
در اصل بی جے پی حکومت کے ذریعہ وعدہ نہیں نبھائے جانے سے ٹی ڈی پی بے حد ناراض ہے ۔ آندھرا پردیش کو خصوصی ریاست کا درجہ دینے کے مطالبہ کو لے کر ریاست کے وزیر اعلی چندرا بابو نائیڈو کئی مرتبہ وزیر اعظم مودی سے ملاقات بھی کرچکے ہیں ، کوئی نتیجہ نہیں نکلنے پر گزشتہ دنوں ایسی قیاس آرائی کی جارہی تھی کہ ٹی ڈی پی این ڈی اے سے الگ ہوجائے گا ، لیکن بعد میں وزیر خزانہ ارون جیٹلی کی یقین دہانی کے بعد نائیڈو مان گئے تھے ۔ جیٹلی نے کہا تھا کہ آندھرا پردیش سے کئے گئے سبھی وعدے پورے کئے جائیں گے اور ٹی ڈی پی این ڈی اے مل کر 2019 کا لوک سبھا الیکشن لڑے گی ۔
اب جیٹلی نے کہا : صرف اسپیشل پیکج ملے گا
تاہم بدھ کو وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے کہا کہ آندھرا پردیش کو خصوصی ریاست کا درجہ دینے کے بارے میں اصل بات یہ ہے کہ کسی ریاست کو خصوصی ریاست کا درجہ کیوں دیا جاتا ہے ؟ انہوں نے بتایا کہ مالی کمیشن کے مطابق صرف شمال مشرقی ریاستوں کیلئے ہی خصوصی ریاست کا بندوبست ہے کیونکہ ان کے پاس اپنے وسائل انتہائی محدود ہیں ۔ بتایا جارہا ہے کہ جیٹلی کے بیان کے بعد ہی ٹی ڈی پی نے این ڈی اے سے الگ ہونے کا فیصلہ کیا ہے۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!