Published From Aurangabad & Buldhana

اوپیندر کشواہا کی این ڈی اے چھوڑ آرجے ڈی سے اتحاد کی تیاری

پٹنہ میں ایک تقریب کے دوران کشواہا نے کہا کہ یدوونشی کا دودھ اور کش ونشی کا چاول مل جائے تو ایک بہترین کھیر تیار ہوگی۔

عام انتخابات 2019 کا وقت نزدیک آ رہا ہے اور سیاسی سرگرمیاں تیز ہو رہی ہیں۔ مرکز کی مودی حکومت میں وزیر اور آر ایل ایس پی (راشٹریہ لوک سمتا پارٹی) کے سربراہ اوپیندر کشواہا نے ایک بیان دے کر ہلچل پیدا کر دی ہے۔ کشواہا کے بیان سے اشارہ ملتا ہے کہ وہ این ڈی اے کا ساتھ چھوڑ سکتے ہیں۔

پٹنہ میں ہفتہ کے روز منعقدہ ایک تقریب کے دوران اوپیندر کشواہا نے کہا، ’’یدوونشی (یادو) کا دودھ اور کش ونشی (کوری) کا چاول مل جائے تو کھیر اچھی ہوگی اور اس ذائقہ دار ڈش کو بننے سے کوئی روک نہیں سکتا۔‘‘ مودی حکومت کے وزیر کے اس بیان کے کئی معنی نکالے جا رہے ہیں اور اس بیان کو لالو پرساد یادو سے جوڑ کر دیکھا جا رہا ہے۔

امت شاہ نتیش کمار کو یہ پیغام دلوا چکے ہیں کہ 2014 میں بی جے پی نے جتنی سیٹیں (22) جیتی تھیں ان میں سے کچھ سیٹوں پر وہ دعویداری تبھی چھوڑے گی جب دونوں جماعتوں کے رہنما باری باری وزیر اعلی بنیں گے۔‘‘
دراصل این ڈی اے کے اتحادییوں کی جانب سے پچھلے مہینے رکھے گئے ڈنر کے وقت کشواہا کی غیرموجودگی سے اتحاد میں سب کچھ ٹھیک نہ ہونے کی چہ میگوئیاں تھیں۔

حالانکہ نتیش کمار نے حالات سنبھالنے کی کوشش کی اور این ڈی اے میں کسی طرح کے شگاف کی بات سے انکار کر دیا تھا۔ نتیش نے کہا تھا چناؤ سے متعلق جو بھی معاملات ہیں وہ چناؤ سے پہلے ہی سلجھا لئے جائیں گے۔

سیٹوں کے بٹوارے اور بہار میں بدلی سیاسی صورت حال کے بعد ایسے قیاس لگائے جا رہے ہیں کہ اوپیندر کشواہا آر جے ڈی کے ساتھ جا سکتے ہیں۔

ان قیاس آرائیوں کو مزید تقویت اس امر سے ملتی ہے کہ اوپیندر کشواہا حال ہی میں بیمار لالو یادو کی عیادت کے لئے پہنچے تھے۔غورطلب ہے کہ بہار میں این ڈی اے میں شامل جماعتوں میں جے ڈی یو اور بی جے پی کے علاوہ مرکزی وزیر رام ولاس پاسوان کی ایل جے پی اور اوپیندر کشواہا کی آر ایل ایس پی جیتی چھوٹی پارٹیاں بھی شامل ہیں۔

بہار میں کل 40 لوک سبھا سیٹیں ہیں اور 2014 میں ہوئے انتخابات کے دوران ایل جے پی اور آر ایل ایس پی نے ساتھ مل کر چناؤ لڑا تھا، جس میں بی جے پی کو 22، ایل جے پی کو 6 اور آر ایل ایس پی کو 3 سیٹیں حاصل ہوئی تھیں۔
اوپیندر کشواہا کے عظیم اتحاد میں شامل ہونے کے اشارے پر تیجسوی یادو نے فوری طور پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے ان کا خیر مقدم کیا ہے۔ انہوں نے ٹوئٹر پر لکھا، ’’بلا شبہ ذائقہ دار اور غذائیت کے پُر کھیر محنت کش لوگوں کی ضرورت ہے۔‘‘

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!