Published From Aurangabad & Buldhana

اورنگ آباد:70ٹرک کچرا پھینکنے کے لئے میونسپل کارپوریشن نے کاٹے کئی درخت

اورنگ آباد:۔ کچرے کی تنظیم اور ماحولیاتی قوانین کی سنگین خلاف ورزی کرتے ہوئے میونسپل انتظامیہ نے نہ ہرسول ساؤنگی کی کھلی زمین پر نہ صرف کچرے سے بھرے70ٹرک پھینکے اور انہیں دفن کیا بلکہ وہاں اس کچرے کو پھینکنے کے لئے بہت سارے درختوں کو بھی کاٹ دیا۔اورنگ آباد میونسپل کارپوریشن کا یہ عمل تب سامنے آیا جب جائے وقوع کو جاکر دیکھا گیا۔

واضح ہوکہ ہائی کورٹ کی جانب سے مارچ کے مہینہ میں ڈیویژنل کمشنر کی صدارت میں ایک کمیٹی تشکیل دی گئی تھی جس نے کچرا پھینکنے کے لئے شہر سے باہر 7مقامات کی نشاندہی کی تھی۔ ہائی کورٹ میں جو حلف نامہ اور ریاستی حکومت کی جانب سے منظور شدہ پروجیکٹ رپورٹ جمع کرائے گئے تھے ان کے مطابق ان مقامات کو آرگناک اور سوکھے کچرے کو پروسیس کیا جائیگا۔

اتفاقاً ، اورنگ آباد میونسپل کارپوریشن کی جانب سے ہرسول ساؤنگی میں جو کچرا کی کاروائی کی گئی ہے اسے اس وقت روک دیا گیا جب مقامی ساکنان نے زمینی پانی کے خراب ہونے کی شکایت درج کرائی۔لیکن اس وقت تک میونسپل کارپوریشن کے اہلکاروں نے اس مقام پر گڑھا کردیا تھا۔ اور اس 4000اسکوائر فٹ کے گھڑے کے لئے بہت سارے درخت کاٹے گئے۔
مقامی سماجی کارکن ایوب پٹیل نے بتایا کہ میونسپل کرپوریشن نے کچرے سے بھرے 70ٹرک لاکر پہلے سے کیے گئے گڑھے میں ڈال دیے۔ مقامی کسان بھاؤ صاحب اوتاڑے نے کہا کہ ایک جانب سرکار درخت لگانے کی بات کرتی ہے اور دوسری جانب سرکاری تنظیمیں اتنی آسانی سے درخت کاٹ دیے۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!