Published From Aurangabad & Buldhana

اورنگ آباد: پلاسٹک بیگ پائے جانے پر 5000روپئے کا جرمانہ، مہاراشٹر پلاسٹک پابندی کل سے شروع

اورنگ آباد:۔ آج مہاراشٹر پلاسٹک پر مکمل پابندی لگانے والی ہندوستان کی 18ویں ریاست بن گئی ہے۔ 23؍مارچ 2018کو ریاست مہاراشٹر کی جانب سے پلاسٹک و تھرماکول کے پروڈکٹس پر پابندی میں اسکا بنانا، بیچنا، ٹرانسپورٹ، استعمال اور ذخیرہ کاری کرنے پر پابندی عائد کی تھی۔

اگر اس میں سے کوئی بھی ہدایت کی خلاف ورزی ہوتی ہے تو پہلی مرتبہ میں 5000روپئے کا جرمانہ دوسری مرتبہ خلاف ورزی پر 10,000روپئے جرمانہ اور تیسری مرتبہ خلاف ورزی پر 25,000روپئے جرمانہ یا تین ماہ جیل یا دونوں کی سزا ہوگی۔ساتھ ہی ان چیزوں کو بنانے والی کمپنی کا لائسنس منسوخ کردیا جائیگا۔

ریاستی حکومت اپنے اس فیصلے کو نافذ کرنے کے لئے مختلف طریقے اپنانے والی ہے۔

ریاستی حکومت نے جن چیزوں پر پابندی لگائی ہے ان میں ہینڈل و بنا ہینڈل والے پلاسٹک بیگ، پلاسٹک و تھرماکول سے بنے قابل نکاس چیزیں جیسے ڈش، کپ ، پلیٹیں،گلاسیس، چمچ، کٹورے و دیگر پلاسٹک کی اشیاء شامل ہے۔ لیکن پلاسٹک بیگ جو دواؤں کو پیک کرنے ، کھاد بن جانے والا پلاسٹک جیسے پودوں و نرسری میں استعمال ہونے والے پلاسٹک بیگس، صنعتوں میں تیار ہونے والی اشیا کو لپیٹنے کے لئے، 50مائیکرون سے کم والی پلاسٹک بیگ،آدھا لیٹر یا اس سے زائد مقدار والی پلاسٹک کی بوتلیں جن پر واپس خریدکی قیمت درج ہو اس پابندی سے باہر ہے۔
حکومت نے اس پابندی کو مارچ کے مہینے میں اعلان کرنے کے بعد چند دنوں کو وقت دیا تھاجو کل ختم ہورہا ہے۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!