Published From Aurangabad & Buldhana

اورنگ آباد: نائب پولس کمشنر پر عصمت دری کا الزام، مقدمہ درج

اورنگ آباد:- شہر کے نائب پولس کمشنر (DCP) کے خلاف کل ایک خاتون پولس کانسٹیبل کی 23 سالہ بیٹی کی عصمت دری کے الزام میں مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

مظلوم نے زون-۲ کے DCP راہل شریرامے کے خلاف چند دن قبل شکایت درج کروائی تھی، تب سے شریرامے چھٹی پر ہیں۔ ایم آئی ڈی سی سڈکو پولس نے DCP کے خلاف یہ مقدمہ کل درج کیا ۔ پی ٹی آئی نیوز ایجنسی سے بات چیت کرتے ہوئے DCP ونایک ڈھاکنے نے کہا کہ “جرم کا اندراج ہو چکا ہے اور اس میں تفتیش کرنے کے بعد مناسب کاروائی کی جائیگی۔ میں آج پولس اسٹیشن پر جاؤنگا اور تفتیش کی شروعات کرونگا۔”

ایم آئی ڈی سی سڈکو پولس تھانہ کے پولس انسپیکٹر سریندر ملالے نے بتایا کہ DCP شریرامے کے خلاف دفعہ 376, 417, 323 اور 506 کے تحت مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ اس کیس کے تفتیشی افسر خود DCP ونایک ڈھاکنے ہیں۔ شکایت کے مطابق آفت رسیدہ کی عصمت دری فروری 2018 سے لیکر 21 جون 2018 تک کی گئی۔

واضح ہوکہ اگست 2012 میں ایک خاتون پولس کانسٹیبل نے شہر کے 3 معاون پولس کمشنروں (ACP’s) کے خلاف ایک سے زائد مرتبہ جنسی استحصال کی شکایت درج کروائی تھی۔ ان ACP’s میں سندیپ بھاجیبھکرے، کے۔ایس بہورے اور این میگھ راجنی کا نام شامل تھا۔
اس کے بعد بھاجیبھکرے کو ریاستی حکومت نے معطل کردیا تھا اور انھوں نے بعد میں معطلی کے خلاف MAT کا دروازہ کھٹ کھٹایا تھا۔ اس سے قبل بھی ایک اسی طرح کا ایک مقدمہ ایک خاتون کی جانب سے اس وقت کے ACP پالوے اور دیگر کے خلاف بھی ہوا تھا۔
(پی ٹی آئی سے مترجم)

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!