Published From Aurangabad & Buldhana

اورنگ آباد: شیو سینا لیڈران نے کلیکٹر آفس میں کچرا ڈالنے پر درج کیس واپس لینے کا کیا مطالبہ

اورنگ آباد:۔ شیو سینا لیڈران کے وفد نے جس میں میونسپل کارپوریشن کے میئر بھی شامل تھے کل شہر کے پولس کمشنر چیرنجیوی پرساد سے مل کر دعویٰ کیا کہ کلیکٹر آفس میں کچرا پھینکنے کے معاملہ کی غلط تعبیر کی گئی ہے۔
ساتھ ہی انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ انکی پارٹی اور پارٹی کارکنان پر درج کیس واپس لے لیا جائے اس لئے کہ احتجاج کرنا ہر ایک کا آئینی حق ہے ۔
شیو سینا لیڈران کلیکٹر آفس میں کچرا ڈالنے کے بعد قومی جھنڈے کی بے حرمتی کا مقدمہ درج ہونے سے بدحواس ہوگئے تھے۔انہوں نے اپنے خلاف کیس درج ہونے پرBJPپر الزام لگایا کہ وہ شیو سینا کی شبیہ بگاڑنے کی کوشش کر رہی ہے۔
واضح ہوکہ ضلع کلیکٹر کے دفتر میں احتجاج کے نام پر کچرا ڈالنے کی وجہ سے تقریباً 15کارکنان جن کی پہچان بتائی گئی ہے اور 125غیر شناخت شدہ کارکنان کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا تھا۔ اس معاملہ کے بعد، ادئے چودھری نے عوام میں بیان دیتے ہوئے کہا تھا کہ ضلع کلیکٹر کے دفتر میں کچرا پھینکنے پر کسی بھی خاطی کو بخشا نہیں جائیگا۔
محصول افسر سنتوش انارتھے کی جانب سے درج شدہ شکایت پر سٹی چوک پولس تھانہ میں سینا کارکنان کے خلاف IPCکی دفعات 143( غیر قانونی طور پر جمع ہونا)، 149(مشترکہ مقصد کے لئے غیر قانونی طور پر جمع ہونا)، 269 اور 270(زندگی کو خطرا ہونے والی بیماری پھیلانے جیسا عمل کرنا) کے تحت مقدمہ درج کیا گیا تھا۔اسکے علاوہ انکے خلاف مہارشٹر پولس ایکٹ، مہاراشٹر ڈفینس مینٹ آف پبلک پروپرٹیز ایکٹ1995، اینوارنمنٹ پروٹیکشن ایکٹ 1986اور کرمنل لاء (امینڈ منٹ ) ایکٹ اور پریوینشن آف انسلٹ ٹو نیشنل آنر ایکٹ 1971کے تحت بھی مقدمہ درج کیا تھا۔
جمعہ کو وفد کی بات تفصیل سے سننے کے بعد پولس کمشنر پرساد نے کہا کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ کسی کے ساتھ ناانصافی ہوئے بغیر قانون اپنا کام کرے۔ کمشنر سے ملاقات پر شیو سینا لیڈر اور میئر نندکمار گھوڑیلے نے کہا کہ ’’ ہمارے لوگوں کو قومی جھنڈے کی بے عزتی کرنے کا غلط الزام لگایا گیا ہے‘‘۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!