Published From Aurangabad & Buldhana

اورنگ آباد: شہر کی ایک بارپھر بد نامی، 332ریلوے اسٹیشن میں شہر کے ریلوے اسٹیشن کا آیا 321واں نمبر

جالنہ، ناندیڑ ، لاتور ،جلگاؤں اورمنماڑ اسٹیشن کی اورنگ آباد سے اچھی کارکردگی

اورنگ آباد:۔ ریاست مہاراشٹر کی سیاحتی راجدھانی مانے جانے والے شہر اورنگ آباد کے ریلوے اسٹیشن کا ملک میں موجود Aضمرے 332ریلوے اسٹیشن میں 321واں نمبر آیا ہے اور اس وجہ سے شہر کی ایک بار پھر بدنامی ہوئی ہے۔ واضح ہوکہ دو دن قبل ہی ملک میں Ease of Living Index کے تحت 111شہروں میں اورنگ آباد کا نمبر 97واں آیا تھا۔
ہندوستان کے ریلوے اسٹیشن کا ایک نجی ادارہ کوالیٹی کاؤنسل آف انڈیا کے ذریعہ سروے کرایا گیا تھا۔ ساؤتھ سینٹرل ریلوے (SCR) جس کے تحت مراٹھواڑہ کے کچھ حصہ آتے ہیں اس کا ہندوستانی ریلوے کے زون میں دوسرا مقام آیا ہے۔ لیکن اورنگ آباد اور مراٹھواڑہ کے کچھ دیگر اسٹیشن کی کارکردگی خراب آئی ہے۔

ادارے کی جانب سے صفائی کو لیکر ملک 407اسٹیشن کا جائزہ لیا گیا تھا جس میں A1ضمرے کے 75اور Aضمرے کے 332اسٹیشن شامل تھے ۔ ایسے اسٹیشن جہاں پر مسافروں کے ذریعہ سالانہ 50کروڑ روپئے حاصل ہوتے ہیں وہ A1ضمرے میں آتے ہیں جبکہ 6کروڑ سے 50کروڑ تک کمانے والے اسٹیشن Aضمرے میں آتے ہیں۔ مراٹھواڑہ میں A1ضمرے کا ایک بھی اسٹیشن نہیں آتا ہے۔

Aضمرے کے اسٹیشنوں میں ناندیڑ کا مقام161واں، جالنہ کا 183واں اور لاتور کا 212واں آیا ہے۔ اسی طرح منماڑ کا 143واں اور جلگاؤں کا 184واں مقام آیا ہے۔ ریلوے کے سماجی کارکن راج سومانی نے کہا کہ انتظامیہ اور ساتھ ہی مسافروں نے اس خراب کارکردگی کا جائزہ لینا چاہیے۔ سومانی نے کہا کہ ’’ صفائی رکھنا سب کی ذمہ داری ہے جس میں ریلوے انتظامیہ اور مسافر دونوں آتے ہیں۔ مراٹھواڑہ کو کہ سیاحتی مرکز مانا جاتا ہے یہاں بہت سارے مسافر دلچسپی کے ساتھ آتے ہیں، ہمیں اس کارکردگی کو بہتر بنانے کو پوری کوشش کرنا چاہیے‘‘۔

SCR ناندیڑ ڈیویژن کے ڈیویژنل ریلوے مینیجرراجیش شندے نے اس موقع پر کہا کہ یہ دیکھنے کی ضرورت ہے کہ یہ کارکردگی پچھلی مرتبہ سے بہتر ہوئی ہے یا اور خراب۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!