Published From Aurangabad & Buldhana

اورنگ آباد: دیر رات انگوری باغ میں نوجوان دانش کا بہیمانہ قتل

مزید دو نوجوان شدید زخمی، سرکاری اسپتال میں داخل

اورنگ آباد: پرانی رنجش کے سبب نتن بھاسکر راو کھنڈاگڑے عرف گبیہ نامی غنڈہ کے ذریعہ کئے گئے قاتلانہ حملہ میں 22 سالہ دانش الدین کی جان چلی گئی اور دیگر تین نوجوان شیخ سلیم، شیخ بابا اور شیخ جبار شدید زخمی ہو گئے ۔ گھاٹی اسپتال میں زخمیوں کا علاج جاری ہے۔ مقتول دانش الدین جھگڑا چھڑانے کی کوشش کر رہا تھا لیکن حملہ آور نوجوان نے دانش پر بھی جان لیوا حملہ کر دیا جس میں وہ جاں بحق ہو گیا۔ یہ واقعہ کل نصف شب انگوری باغ علاقہ میں پیش آیا۔ پولس نے نشہ میں دھت قاتل گبیہ کو گرفتار کر لیا ہے ۔

واضح رہے کہ مقتول دانش ہندی ہفت روزہ آج کی عدالت کے مدیر اعلی اور شہر کی بااثر شخصیات میں شمار سید شفیع الدین کا فرزند تھا۔ اس بہیمانہ قتل اور جان لیوا حملہ کی وجہ سے انگوری باغ اور موتی کارنجہ علاقہ میں زبردست کشیدگی رہی ۔

آج دوپہر کالی مسجد میں مرحوم دانش کی نماز جنازہ ادا کی گئی اور تدفین عمل میں آئی ۔ جس میں ہزاروں کی تعداد میں خیر خواہ شریک رہے ۔ معاملہ کی سنگینی کے پیش نظر انگوری باغ علاقہ میں زبردست پولس بندوبست رکھا گیا تھا۔ اس ضمن میں موصولہ تفصیلات کے مطابق قاتل گبیہ کا کچھ دنوں پہلے ہی شیخ جبار کے ساتھ کسی بات پر جھگڑا ہوا تھا۔ اسی رنجش کے سبب گبیہ نے گذشتہ نصف شب انگوری باغ علاقہ میں شیخ جبار جس وقت اپنے دوست شیخ سلیم اور شیخ بابا کے ساتھ بات چیت کر رہا تھا، اچانک تیز دھاردار چاقو سے حملہ کر کے زخمی کر دیا ۔ وہیں کچھ فاصلہ پر موجود چبوترے پر بیٹھے دانش الدین نے یہ دیکھ کر بیچ بچاو کی کوشش کی ۔ لیکن نشہ میں چور غنڈہ گبیہ نے دانش پر بھی بے رحمی سے وار کر دیا۔ اس حملہ میں دانش کی جائے موقع پر ہی موت واقع ہو گئی اور تینوں دوست شدید زخمی ہو گئے۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!