Published From Aurangabad & Buldhana

اورنگ آباد: اندرون ایک ماہ منتقل کی جائے گی روشن گیٹ کی بجلی ڈی پی

اورنگ آباد: 2 نومبر (سینئر رپورٹر)گذشتہ اسٹینڈنگ کمیٹی میٹنگ میں مجلس کارپوریٹر سید متین نے ان کی متعدد ترقیاتی کاموں کی فائلیں لاپتہ ہونے اور ٹی ڈی آر کی فائلیں گم ہونے کے علا وہ روشن گیٹ سے متصل بجلی ڈی پی منتقل کرنے کے موضوعات پر نمائندگی کی تھی ۔ اس تعلق سے آئندہ میٹنگ تک ان مسائل کو حل کرنے کی چیئرمن نے انتظامیہ کو ہدایت دی تھی۔ اسی مناسبت سے سید متین نے آج کی میٹنگ میں ان تمام معاملات پر نمائندگی کی۔ سید متین نے شکایت کی کہ ٹی ڈی آر کی فائلیں آج تک ندارد ہیں ۔ متعلقین جوتیاں گھسنے پر مجبور ہیں ۔

جبکہ ٹی بی ہاسپٹل جامع مسجد تا دلرس کالونی فصیل تک راستہ تعمیر کی ایک کروڑ کی منظورشدہ فائل بھی شعبہ میں دستیاب نہیں ہے ۔ایک کروڑ کی لاگت سے تعمیر ہونے والے جماعت خانہ کی فائل کا بھی ابھی تک پتہ نہیں چلا ہے ۔ سب سے اہم یہ کہ روشن گیٹ سے متصل بجلی ڈی پی کو ہٹانے صرف 2 لاکھ روپئے خرچ درکار ہونے کی اطلاع دیتے ہوئے لائٹ سیکشن کے انجینئر دیشمکھ نے اکاؤنٹ سے دو لاکھ منظور ہوتے ہی ہٹانے کا وعدہ کیا تھا۔ مگر وہ ڈی پی آج بھی منتقل نہیں کی گئی ؟ سید متین نے الزام عائد کیا کہ اکاؤنٹ سیکشن سے 18 کروڑ کے چیک بانٹے گئے ، کیا ڈی پی کے لئے صرف 2 لاکھ بھی اکاؤنٹ میں نہیں ہیں ؟ سید متین کی اس شکایت کے تحت چیئرمن نے ڈپٹی انجینئر دیشمکھ کو خلاصہ کرنے کا حکم دیا۔ دیشمکھ نے بتایا اکاؤنٹ میں دو لاکھ کی فائل ہے۔

اس پر چیف اکاؤنٹ آفیسر نے خلاصہ کیا کہ کسی بھی کام کا چیک جاری کرنے سے پہلے متعلقہ شعبہ سے واوچر اور تفصیلات پیش کی جاتی ہیں اسی مناسبت سے چیک جاری ہوتے ہیں ۔ ڈی پی کا واؤچر ابھی تک میری نظروں سے نہیں گزرا ، دیکھ کر فوری منظوری دی جائے گی۔ اس پر سید متین نے پوچھا دو لاکھ اکاؤنٹ سے منظور ہونے کے کتنے دنوں میں روشن گیٹ کی ڈی پی ہٹائی جائے گی اس کا خلاصہ کیا جائے۔ انجینئر دیشمکھ نے کہا اندرون ایک ماہ اس ڈی پی کو ہٹا دیا جائے گا۔ سید متین نے چیئرمن سے کہا اب ایک مہینہ بعد ہی اس ڈی پی کے مسئلہ پر بات کروں گا۔

اگر یہ کام اس دوران نہ ہوا تودیشمکھ کے خلاف کیا کاروائی کی جائے گی، کیا انہیں معطل کیا جائے گا ؟ اس پر چیئرمن نے کہا اگر ایک مہینہ میں ڈی پی کو شفٹ نہیں کیا گیا تو دیشمکھ کو ہی شفٹ کر دیا جائے گا۔ اس کے بعد ٹی پی سیکشن انجینئر ایس ایس کلکرنی نے وضاحت کی کہ کارپوریٹر سید متین کے ٹی ڈی آر اور دیگر کاموں میں سے دو فائلیں مل چکی ہیں اور دیگر تمام شعبہ جات کو ہدایت دی گئی ہے کہ سید متین کے کاموں کی فائلیں تلاش کرکے فوری پیش کریں ۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!