Published From Aurangabad & Buldhana

اورنگ آباد:ریاست کے دو اضلاع میں وقف کی نئی 1700جائیدادیں ہوئی دریافت

اورنگ آباد: ریاستی حکومت کی جانب سے وقف جائیدادوں کو دریافت کرنے کے پروجیکٹ کے ذریعہ ریاست میں صرف دو اضلاع پونہ اور پربھنی میں 1700نئی وقف جائیدادیں دریافت ہوئی ہیں۔ اس کامیابی کے بعد ریاستی حکومت اب وقف جائیدادوں کو تلاش کرنے کا یہ پروجیکٹ کا نفاز دیگر اضلاع میں بھی کیا جائیگا۔

ریاستی حکومت کے اعدادو شمار کے مطابق مہاراشٹر میں 93,418ایکر وقف کا زمین ہے جس میں سے 23,566جائیدادیں رجسٹرڈ ہیں۔ ان میں سے زیادہ تر زمین اورنگ آباد ڈیویژن میں ہے۔ جس کی وجہ ہے کہ نظام کے دور حکومت کا بڑا حصہ اسی ریجن میں آتا تھا۔ اورنگ آباد کے بعد پونہ کا نمبر آتا ہے جہاں پر وقف کی 9310ایکر زمین ہے، اسکے بعد ناگپور ڈیویژن میں 9260ایکر وقف کی زمین ہے۔ پھر ناسک ڈیویژن میں 8350ایکر، کونکن میں 5941ایکر زمین اور امراوتی میں 2755
ایکر وقف کی زمین موجود ہے۔
حالانکہ ان میں سے اکثر زمین پر غیر قانونی قبضہ جات ہیں اور وقف افسران نے اس بات کا اقرار کیا ہے کہ ان زمینوں کی حفاظت کرنے والا وقف کا سسٹم بہت سی خامیوں سے بھرا ہے۔ 2017میں ریاستی اقلیتی ترقی کے شعبہ نے 1.08کروڑ روپئے کا پائلٹ پروجیکٹ شروع کیا تھا جس میں وقف جائیدادوں کو تلاش کرنا تھا ۔ یہ پروجیکٹ شروعاتی طور پر پونہ اور پربھنی میں انجام دیا گیا۔ اس سروے پروجیکٹ میں کمیٹی کو پربھنی میں 273اور پونہ میں 1465نئی وقف کی جائیدادیں دریافت ہوئی ہیں۔جب 2002میں وقف کا سروے کیا گیا تھا تو اس میں پربھنی اور پونہ میں کل 1189اور 153جائیدادیں ملی تھیں۔ افسران کے مطابق جو نئی جائیدادیں ملی ہیں ان میں سے پربھنی میں 15زمینوں اور پونہ میں 5زمینوں پر ناجائز قبضہ جات ہیں۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!