Published From Aurangabad & Buldhana

امریکی خفیہ ایجنسی سی آئی اے نے وشو ہندو پریشد اور بجرنگ دل کو بتایا مذہبی انتہا پسند تنظیم ، وی ایچ پی برہم

امریکہ کی سینٹرل انٹلی جنس ایجنسی ( سی آئی اے ) کی حالیہ ورلڈ فیکٹ بک میں وشو ہندو پریشد اور بجرنگ دل کومذہبی انتہا پسند تنظیم قرار دیا گیا ہے۔ سی آئی اے نے اپنی فیکٹ بک میں ایسی تنظیموں کی پولیٹیکل پریشر گروپ کے تحت زمرہ بندی کی ہے۔ یہ تنظیم سیاست میں شامل ہوتی ہیں یا پھر بہت زیادہ سیاسی دباو بناتی ہیں ، لیکن ایسی تنظیموں کے لیڈران الیکشن نہیں لڑتے ہیں۔

سی آئی اے نے وی ایچ پی اور بجرنگ دل کے علاوہ آر ایس ایس ، حریت کانفرنس اور جمعیت علما ہند ( محمود مدنی ) کو بھی سیاسی دباو بنانے والی تنظیم کی کٹیگری میں رکھا ہے ۔ آر ایس ایس کو نیشنلسٹ آرگنائزیشن ، حریت کانفرنس کو علاحدگی پسند تنظیم اور جمعیت علما ہند ( محمود مدنی ) کو مذہبی تنظیم کے درجہ میں رکھا ہے جبکہ وی ایچ پی اور بجرنگ دل کو مذہبی انتہا پسند تنظیم بتایا ہے۔

ادھر اس رپورٹ کو جھوٹ کا پلندہ قرار دیتے ہوئے وی ایچ پی کے ترجمان ونود بنسل نے کہا کہ ہم نے حکومت سے اس معاملہ میں مداخلت کیلئے کہا ہے۔ سی آئی اے کی اس رپورٹ پر امریکی حکومت سے بات کرنے کیلئے بھی کہا گیا ہے ۔ حکومت کو ہمارے ساتھ اس معاملہ کو اٹھانا چاہئے ۔ سی آئی اے کو بھی معافی مانگنی چاہئے اور رپورٹ پر کام کرنا چاہئے۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!