Published From Aurangabad & Buldhana

’اس سال بچوں کے لئے کووڈ-19 کی ویکسین آنے کی امید نہیں‘

UNI

ماسکو: جلد ہی دنیا کی پہلی کورونا ویکسین تیار کرنے کا دعویٰ کر رہے روس کے انسٹیٹیوٹ ’دی گامالے آف سائنٹفک ریسرچ انسٹیٹیوٹ آف ایپیڈیمولوجی اینڈ مائیکروبایالوجی‘ کے سربراہ الیگزینڈر گنز برگ نے کہا ہے کہ بچوں کے لیے رواں سال کورونا وائرس (کووڈ -19) ویکسین آنے کی امید نہیں ہے۔ گنز برگ نے کہا ہے کہ اس ویکسین کا تجربہ روس میں فی الحال صرف بالغ افراد پر کیا جا رہا ہے۔

الیگزینڈر گنز برگ کا کہنا ہے کہ ’’مجھے پوری امید ہے کہ یہ ویکسین بچوں کے لئے بھی فائدہ مند ہوگی ، لیکن روسی قانون کے مطابق یہ ویکسین بالغ افراد پر تجرباتی مراحل کی تکمیل کے بعد ہی بچوں پر آزمایا جاسکتا ہے۔اس وقت ، اس ویکسین کے تیسرے مرحلے کا تجربہ 18 سال سے زیادہ عمر کے لوگوں پر کیا جارہا ہے۔‘‘

دریں اثنا ’سیچینووف انسٹی ٹیوٹ فار ٹرانسلیشنل میڈیسن اینڈ بائیوٹیکنالوجی‘ کے ڈائرکٹرواڈیم تاراسوف نے بتایا کہ بچوں پر اس ویکسین کی جانچ سے پہلے اس کا تجربہ چھوٹے جانوروں پر کیا جائے گا اور تب ہی بچوں پر ویکسین کے ٹیسٹ کا فیصلہ کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ’’یہ کہنا ابھی قبل ازوقت ہوگا کہ یہ ویکسین بچوں پر استعمال کیاجائے گا یا نہیں ۔ بچے کورونا کے رسک گروپ میں نہیں ہیں۔‘‘

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!