Published From Aurangabad & Buldhana

آسٹریلیا نے پاکستان کو تیسرے ٹی ٹوئنٹی میں 10وکٹ سے شرمناک شکست دیکر سیریز اپنے نام کی

کپتان ایرون فنچ اور ڈیوڈ وارنر کی اوپننگ جوڑی کے درمیان 109 رنز کی ناٹ آؤٹ ساجھیداری سے آسٹریلیا نے جمعہ کو یہاں تیسرے ٹوئنٹی 20 میچ میں پاکستان کو 10 وکٹوں سے ہرا دیا اور ساتھ ہی ساتھ سیریز 2-0 سے اپنے نام کر لی۔ آسٹریلیا نے پاکستان کو میچ میں مقررہ 20 اوورز میں آٹھ وکٹ پر صرف 106 رن کے اسکور پر روکنے کے بعد بغیر کسی نقصان کے 11.5 اوورز میں ہی ہدف کا تعاقب کر لیا۔

سلامی بلے باز وارنر نے 35 گیندوں میں چار چوکے اور دو چھکے لگا کر ناٹ آؤٹ 48 رنز اور فنچ نے 36 گیندوں میں چار چوکے اور تین چھکے لگا کر ناٹ آؤٹ 52 رنز کی اننگز کھیلی اور ٹیم کو جیت دلائی۔ میزبان ٹیم نے کینبرا میں سات وکٹوں سے جیت درج کی تھی جبکہ سڈنی میچ بغیر نتیجہ ختم ہوا تھا۔ آسٹریلوی ٹیم کے لیے پرتھ میں یہ ٹوئنٹی 20 فارمیٹ میں مسلسل آٹھویں جیت ہے۔ ٹیم اگلے سال اپنی میزبانی میں آئی سی سی ٹی -20 ورلڈ کپ کے لیے اترے گی۔

دوسری طرف پاکستان کی یہ آخری چھ میچوں میں پانچویں شکست ہے۔ اسے سری لنکا کے خلاف بھی سیریز میں 0-3 سے وہائٹ واش کا سامنا کرنا پڑا تھا ۔ تاہم اس کے باوجود وہ اس فارمیٹ میں نمبر ون رینک ٹیم بنی ہوئی ہے۔

پاکستانی ٹیم کا آغاز کافی خراب رہا اور اس کے صرف دو بلے باز ہی دہائی کے ہندسے تک پہنچ سکے۔ اوپنر امام الحق نے 14 رن بنائے ، جس کے بعد کپتان بابر اعظم (6)، محمد رضوان (0)، حارث سہیل (8) رنز بنا کر پویلین لوٹ گئے۔ مڈل آرڈر میں اکیلے افتخار احمد کی 45 رنز کی اننگز سے ٹیم 100 رنز تک پہنچ سکی۔ احمد نے 36 گیندوں میں چھ چوکے بھی لگائے اور ساتویں بلے باز کے طور پر آؤٹ ہوئے ، جنہیں کین رچرڈسن نے آؤٹ کیا۔

اس سے قبل آسٹریلیائی کپتان ایرون فنچ نے ٹاس جیت کر پاکستان کی ٹیم کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی ۔ کپتان بابر اعظم نے امام الحق کے ہمراہ آسٹریلیا کے خلاف اننگز کا آغاز کیا ، لیکن گزشتہ 2 میچ کے برعکس کپتان بابر اعظم اچھی کارکردگی نہ دکھاسکے اور دوسرے اوور میں 6 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئے۔ بابر اعظم کے بعد وکٹ کیپر بلے باز محمد رضوان میدان میں آئے لیکن دوسرے اوور کی تیسری بال پر صفر پر ہی آؤٹ ہوگئے۔ محمد رضوان کے بعد حارث سہیل نے ٹیم کی بیٹنگ لائن کو سنبھالنے کی کوشش کی ، لیکن اس مرتبہ اوپنر امام الحق 22 کے مجموعی اسکور پر 14 رنز بناکر آؤٹ ہوگئے۔

حارث سہیل اور افتخار احمد نے چوتھی وکٹ کیلئے 32 رنز جوڑے ، جس کے بعد حارث سہیل ایشٹن ایگر کی گیند پر کیچ آؤٹ ہوگئے ۔ اپنا پہلا مقابلہ کھیلنے والے خوشدل شاہ بھی صرف8رنز بنا سکے ، افتخار احمد 6 چوکوں کی مدد سے 45 رنز بنا کر پویلین لوٹے۔ شاداب خان بھی صرف ایک رن بنا کر چلتے بنے ۔ آخری دو اوورز میں پاکستانی بلے بازوں نے محض 2 رنز بنائے۔اس طرح پاکستانی ٹیم مقررہ 20 اوورز میں 8 وکٹوں کے نقصان پر صرف 106 رنز ہی بناسکی ۔

آسٹریلیا کیلئے ریچرڈ سن نے3 ، اسٹارک اور ایبٹ نے2 ۔ 2 اور ایگر نے ایک وکٹ لی ۔ ریچرڈسن نے میچ میں 18 رنز دے کر سب سے زیادہ تین وکٹ نکالے۔ مشیل اسٹارک اور سال 2014 کے بعد اپنا پہلا بین الاقوامی میچ کھیل رہے سین ایبوٹ کو دو دو وکٹ ملے ۔ ایشٹن ایگر نے بھی ایک وکٹ لیا ۔ ایبوٹ کو ان کی کارکردگی کے لئے مین آف دی میچ اور اسٹیون اسمتھ کو پلیئر آف دی سریز منتخب کیا گیا۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!