Published From Aurangabad & Buldhana

آئندہ عام انتخابات بیلیٹ پیپر پر کروانے اپوزیشن کا پُر زور مطالبہ EVM پر اعتماد نہیں‘ جانچ کیلئے ہمارے حوالے کی جائے

اَورنگ آباد: ۱۲؍ستمبر ( رپورٹر) آئندہ سال منعقد ہونے والے لوک سبھا انتخابات کیلئے ضلع انتظامیہ کی تیاریاں زورو شور سے جاری ہے اور ان انتخابات میں رائے دہی کیلئے استعمال ہونے والی الیکٹرانک ووٹنگ مشین (EVM) کی جانچ کیلئے آج ضلع انتظامیہ نے شہر کی تمام چھوٹی بڑی سیاسی پارٹیوں کے نمائندوں کو مدعو کیا تھا۔ مقررہ وقت پر بی جے پی کو چھوڑ کر شہر کی تمام بڑی پارٹیوں کے علاوہ دیگر افراد پہنچے۔ ضلع انتظامیہ نے تمام نمائندوں کو EVMمشین کی مکمل معلومات فراہم کروائی اور انہیں یہ بآور کرانے کی کوشش کی کہ EVM میں کسی طرح کی چھیڑ چھاڑ ممکن نہیں ہے۔ مگر نمائندوں نے ضلع انتظامیہ کے تمام دعووں کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ حال اور ماضی میں ملک میں جو بھی عام انتخابات کے نتائج سامنے آئے ہیں اس سے ہمارا اعتماد ای وی ایم سے اُٹھ گیا ہے۔ شیوسینا ، کانگریس، ایم آئی ایم ، راشٹروادی کانگریس، ایم این ایس و دیگر پارٹیوں نے مطالبہ کیا کہ آئندہ عام انتخابات بیلیٹ پیپر پر کروائے جائیں۔ ساتھ ہی انہوں نے یہ بھی مطالبہ کیا کہ ای وی ایم کو 24گھنٹے ہماری تحویل میں دی جائے تاکہ ہم ہمارے انجینئرس سے یہ معلوم کرسکے کہ اس کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کی جاسکتی ہے یا نہیں۔
انہوں نے دہلی میں عام آدمی پارٹی کی جانب سے کئے گئے ڈیمانسٹریشن کا بھی حوالہ دیا۔ نمائندو ں کا کہنا ہے کہ ہمیں شک ہی نہیں یقین ہے کہ بی جے پی ای وی ایم مشین میں چھیڑ چھاڑ کرکے ہی اقتدار پر آئی ہے۔ ضلع انتظامیہ نے کہا کہ ای وی ایم کے تعلق سے جو بھی شکایتیں کی جارہی ہیں وہ قیاس آرائیوں پر مبنی ہیں۔ واضح رہے کہ الیکشن کمیشن کی جانب سے دئیے گئے الیکشن پروگرام کے مطابق ملک میں آئندہ ہونے والے انتخابات کو صاف و شفاف طریقے سے منعقد کرنے کیلئے ووٹنگ مشینوں کی آزادانہ جانچ کروانے کا حکم دیا گیا ہے۔ الیکشن کمیشن کی ہدایت پر ضلع انتظامیہ کو موصولہ ووٹنگ مشینوں کی شیڈول کے مطابق جانچ کی جارہی ہے۔

مشینوں کی اس جانچ میں تمام قومی سیاسی جماعتوں سے وابستہ نمائندے یا متوقع اُمیدوار سمیت صحافی و عام شہریوں کا داخلہ رکھا گیا ہے۔ ضلع انتظامیہ کی اطلاع انتخابات میں استعمال ہونے والی مشینوں سے متعلق سیاسی جماعتوں و عام شہریوں کے شکوک و شبہات دور کرنے اورمشینوں میں کچھ خرابی ہو تو اس کا پتہ لگانے ان کی جانچ کی جارہی ہے‘ گورنمنٹ کالج آف آرٹس قلعۂ ارک کی عمارت میں ہونے والی اس فرسٹ لیول چیکنگ (FLC) میں مشینوں سے متعلق اشکالات اور ماک پول پروسیس کو دکھایا گیا۔ یہ تمام کارروائی کلوز سرکٹ کیمروں کی نگرانی میں کی گئی۔نمائندوں کو اپنے ساتھ موبائل یا دیگر الیکٹرانک آلات رکھنے پر امتناع عائد تھا۔

You might also like

Subscribe To Our Newsletter

You have Successfully Subscribed!